نمایاں ترین

3/14/2017 12:00:00 AM

بی جے پی منتر: اگرآپ الیکشن نہیں جیت سکتے تو مال کا استعمال کر کے حکومت حاصل کرلیں


انتخابات میں کس چیز کی سب سے زیادہ اہمیت ہوتی ہے؟ عوام کے ووٹ کی۔ الیکشن بوتھ پر تمام ہندوستانی یکساں حیثیت رکھتے ہیں۔ تمام رائے دہندگان کے اختیارات یکساں ہوتے ہیں۔ پانچ ریاستوں میں ابھی انتخابات ہوئے ہیں ان میں تین ریاستوں جیسے گوا ، پنجاب منی پور میں کانگریس کو مینڈیٹ حاصل ہوا۔ ہم اتر پردیش اور اترا کھنڈ کے نتائج کا احترام کرتے ہیں۔ لیکن گوا اور منی پور میں بی جے پی نے مال کا استعمال کر کے مینڈیٹ کو خرید لیا ہے۔ 

انڈین نیشنل کانگریس گوا اور منی پور میں واحد سب سے بڑی پارٹی ہے۔ لیکن پھر بھی بی جے پی گورنر کا غلط استعمال کر کے عوامی مینڈیٹ کو لوٹ رہی ہے اور دونوں جگہوں پر اپنی حکومت بنانے جا رہی ہے۔ جیسا کہ ہم دوسری ریاستوں میں دیکھتے آئے ہیں جب بی جے پی کو مینڈیٹ نہیں ملتا ہے تو وہ پیسہ اور پاور کا استعمال کر کے حکومت بنا لیتی ہے۔ 

جمہوریت میں سب سے بڑی چیز یہ ہے کہ انتخابات صاف اور شفاف ہوں۔ لیکن جناب مودی اورامت شاہ کی قیادت میں بی جے پی نے جو کچھ کیا ہے وہ جمہوریت کو تباہ کر دینے والا عمل ہے۔  اب بی جے پی کو اس سے مطلب نہیں ہے کہ عوام نے کسے منتخب کیا ہے انھیں صرف نمبر کے کھیل سے مطلب ہے۔ بی جے پی کام تو نہیں کر سکتی البتہ اس نے کوئلے کی کانکنی میں گھوٹالہ کیا، لوگوں کو ہلاک کیا ، ویاپم گھوٹالے کو انجام دیا۔ گجرات میں انسانی ترقی کے انڈیکس میں بھاری گراوٹ دیکھی جا رہی ہے۔
    
بی جے پی انتخابات میں تمام انرجی کو لگا دیتی ہے ، جھوٹے وعدے کر تی ہے اور عوام کو فرقہ پرستی کے ایشو پر گولبند کرتی ہے اس طرح وہ اپنے حریف کو ہرانے میں کامیاب ہو جاتی ہے۔ بی جے پی نے اس فن میں مہارت حاصل کر لی ہے۔ 

تاہم انھیں یہ جاننا چاہئے کہ عوامی امنگوں کو فار گرانٹیڈ نہیں لینا چاہئے۔ ہندوستان کی طاقت عوام کے پاس ہے اور بی جے پی نے عوام کودھوکہ دینے کی کوشش کی ہے۔ بی جے پی کو آخر کار پتہ چل جائے گا کہ انھوں نے عوام کے ساتھ جو کچھ کیا ہے وہ صحیح نہیں تھا۔

 
انڈین نیشنل کانگریس، 24، اکبر روڈ، نئی دہلی – 110011، انڈیا، ٹیلیفون: 23019080-11-91 | فیکس: 23017047-11-91 | ای میل: connect@inc.in © 2012-2013 کل ہند کانگریس کمیٹی۔ جملہ حقوق محفوظ ۔ شرائط و ضوابط | رازداری پالیسی