نمایاں ترین

5/8/2017 12:00:00 AM

عام آدمی پارٹی کی منافقت اور بدعنوانی کے خلاف جھوٹی لڑائی کا پردہ فاش


ان دنوں ہم عام آدمی پارٹی کی منافقت اور بدعنوانی کے خلاف ان کی جھوٹی لڑائی کا پردہ فاش ہوتے ہوئے دیکھ رہے ہیں۔ دہلی حکومت کے ایک سابق وزیرنےاس بات کا انکشاف کیا ہے کہ جناب اروند کجریوال نے ریاستی وزیر برائے صحت مسٹر ستیندرجین سے 2 کروڑ روپے بطور رشوت حاصل کئے تھے۔ 

سابق وزیرکپل مشرا نے اس بات کا بھی الزام لگا یا ہے کہ مسٹر جین نے ان سے 50 کروڑکی زمین کا سودہ کرنے کوکہا تھا اور یہ زمین اروند کجریوال کےایک رشتہ دار دی جانی تھی۔  

کانگریس نائب صدرجناب راہل گاندھی نے ٹیوٹر پر اس معاملہ میں آپ کی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ " سچائی کو دبا یا نہیں جا سکتا اور سچائی میں وہ طاقت ہوتی ہے کہ وہ خود بخود سامنے آجاتی ہے۔ ریاستی کانگریس صدرجناب اجے ماکن نے اس معاملہ میں حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ سابق وزیرکپل مشرا نے جوکچھ کہا ہے وہ صرف ایک انکشاف یا الزام تراشی ہی نہیں ہے بلکہ اس کی حیثیت ایک شہادت کی بھی ہے کیونکہ وہ ایک وزیر ہیں۔ انھوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ کو اس معاملہ میں مستعفی ہوجا نا چاہئے۔ 

عام آدمی پارٹی اس بات کا دعویٰ کرتی رہی ہے کہ وہ  بدعنوانی کے خلاف جنگ لڑ رہی ہے۔ بدعنوانی کے نام پراس نے عوام کے ووٹ بھی حاصل کئے ہیں تاہم ابھی کرپشن کے جو واقعات سامنے آئے ہیں ان سے عام آدمی پارٹی کی منافقت کا پردہ فاش ہوجا تا ہے۔ 

قابل ذکر بات یہ ہے کہ عام آدمی پارٹی نے کانگریس کے لیڈران پر ہمیشہ بدعنوانی کا الزام لگا یا ہے۔ لیکن اب تک وہ اپنی الزام تراشی کو ثابت کرنے کے لئے کو شواہد پیش نہیں کرسکے ہے۔ اگرعام آدمی کے پاس اس سلسلے میں کوئی ثبوت ہوتا تو وہ اب تک اس ثبوت کو پیش کر چکی ہوتی۔  

سچی بات یہ ہے کہ عام آدمی پارٹی بی جے پی کی بی ٹیم ہے۔ حالیہ دنوں میں شا نگھلو کمیٹی نے جو رپورٹ پیش کی ہےاسے سرد خانے میں ڈال دیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ بی جے پی حکومت نے آپ کے خلاف بدعنوانی اوراراضی گھوٹالہ معاملہ میں ایک بھی ایف آئی آر درج نہیں کرا یا ہے۔ 

 مودی حکومت سے اس بات کی توقع نہیں رکھی جا سکتی کہ وہ آپ کے خلاف کاروائی کرے گی کیونکہ وزیر اعظم کے نام بھی کئی قسم کی بدعنوانی کے معاملات میں ملوث پائے گئے ہیں۔ خاص طور سے سہارا برلا ڈائری معاملہ میں۔ بی جے پی حکومت کجریوال کے خلاف تفتیش کا حکم نہیں دے گی کیونکہ ایسا کرنے پرانھیں وزیراعظم کے خلاف بھی کاروائی کر نی ہوگی۔ 

جناب کجریوال اور مسٹر مودی کو بجانے کے لئے بی جے پی اور آپ میں ایک قسم کا سمجھوتہ ہوچکا ہے اوراس درمیان عام آدمی پس رہا ہے۔

 
انڈین نیشنل کانگریس، 24، اکبر روڈ، نئی دہلی – 110011، انڈیا، ٹیلیفون: 23019080-11-91 | فیکس: 23017047-11-91 | ای میل: connect@inc.in © 2012-2013 کل ہند کانگریس کمیٹی۔ جملہ حقوق محفوظ ۔ شرائط و ضوابط | رازداری پالیسی