نمایاں ترین

8/7/2017 12:00:00 AM

بی جے پی کا بیٹا بچائو، عصمتی دری بڑھائو منصو بہ




لڑکیوں کا تعاقب، چھیڑ چھاڑ ، عصمت دری ان تمام واقعات میں سیاسی طاقت کا عمل دخل ہوتا ہے۔ اگر آپ بی جے پی میں ہیں تو آپ جو دل میں آئے کر سکتے ہیں۔ آپ کو یہ احساس رہے گا کہ آپ کا باپ آپ کو پولیس اورانتظامیہ کی پکڑ سے بچا لے گا۔ آپ پر ہلکے قسم کے چارج لگائے جائیں گے اور آپ ضمانت پررہا ہو جائیں گے۔

یہ کہا نی بی جے پی کے برات وکاس برلا کی ہے جو کہ ہریانہ بی جے پی صدرکا بیٹا ہے۔ وہ چار اگست کی نصف رات کو 29 سال کی لڑکی کا سات کلو میٹر تک تقریباً آدھے گھنٹے تک تعاقب کر تا رہا اس دوران اس نے لڑکی کو اغوا کرنے کی کوشش کی۔

چونکہ چنڈی گڑھ متحدہ عملداری کے تحت آتا ہے، اس لئے یہاں کی انتظامیہ کی ذمہ داری وزیر داخلہ کی ہے۔ اس پورے کیس میں بی جے پی نے لڑکے کو بچانے کی پوری کوشش کی۔ اس سچائی کے با وجود کہ لڑکی نے ایف آئی آر درج کرا دیا اورواضح کیا کہ برالا نے اسے اغوا کرنے، اسے تکلیف پہنچانے اوراس کی ناموس کو تاتار کرنے کی کوشش کی پھربھی پولیس نے بی جے پی کی مدد کرتے ہوئے اس پرغیر ضمانتی شقیں 341 غلط طریقہ سے روکنا ،   365 اغوا کرنے کی کوشش کرنا 511 جس کے تحت عمرقید کی سزا کا بندو بست ہے سے پرہیز کیا۔ انھوں نے بہت ہلکے قسم کا  معاملہ آئی پی سی سیکشن کے 354D  تعاقب کے معاملہ میں آئین کی شق 185  شراب پی کر ڈرائیونگ کا معاملہ درج کیا اور مجرم کو ضمانت پر فوراً رہا کر دیا۔ حیرانی کی بات تو یہ ہے کہ اس علاقے میں چھہ سی سی ٹیوی کیمروں میں سے کسی میں کوئی فوٹیج نہیں رہنے دیا گیا۔

دلچسپ بات تو یہ ہے کہ ہریانہ کے وزیراعلیٰ نے ہریانہ بی جے پی کے صدر کے بیٹے برالا کا دفاع کرنے میں تھوڑی سی بھی تاخیر نہیں کی۔ یہاں تک کہ برالا فیملی نے سوشل میڈیا پر متاثرہ خاتون کے ناموس پر حملہ کیا۔ بی جے پی چنڈی گڑھ کے نائب صدر رام ویر بھٹی نے تو اخلاقیات کی تمام حدیں پار کردیں اور یہ سوال کھڑا کر دیا کہ متاثرہ کے والدین نے اتنی رات میں بیٹی کو باہر نکلنے کی اجازت کس طرح دی؟ بلا شبہ اس سے بی جے پی کی لڑکیوں کے تئیں گندی ذہنیت کا پتہ چلتا ہے۔

جہاں تک اس لڑکی کا سوال ہے تو یہ بات صاف ہے کہ یہ بہادر لڑکی وکاس برلا کو قانون کے شکنجے میں لانے کے لئے پر عزم ہے۔ ایک آئی اے ایس افسر کی بیٹی ہونے کی وجہ سے وہ ان لڑکیوں کی بھی آواز بننا چاہتی ہیں جو بی جے پی لیڈرران کی شرارت کا مقابلہ کرنے کی جرائت نہیں دکھاپاتیں اورخاموشی کے ساتھ سب کچھ برداشت کر لیتی ہیں۔ اس بہادر لڑکی کی کو ملک کے عوام اورکانگریس پارٹی کی حمایت حاصل ہے۔ امید کی جا سکتی ہے کہ یہ آواز بی جے پی کی "بیٹا بچائوعصمت دری بڑھا ئو" مہم پر کاری ضرب لگائے گی۔

 
انڈین نیشنل کانگریس، 24، اکبر روڈ، نئی دہلی – 110011، انڈیا، ٹیلیفون: 23019080-11-91 | فیکس: 23017047-11-91 | ای میل: connect@inc.in © 2012-2013 کل ہند کانگریس کمیٹی۔ جملہ حقوق محفوظ ۔ شرائط و ضوابط | رازداری پالیسی