نمایاں ترین

10/2/2017 12:00:00 AM

آج اگر مہاتما گاندھی ہوتے تو وہ کیا کرتے



آج سے 10 سال قبل یو پی اے کے دور میں یو این میں ہندوستانی سفارت کار مرحوم نروپم سین کے ساتھ 140 ممالک کے سفارت کار اور لیڈران مہاتما گاندھی کی سالگرہ منانے کے لئے جمع ہوئے۔ اس دن کو "یو م عدم تشدد" کے دن کے طور پر پوری دنیا میں منا یا گیا۔

نیتا جی سبھاش چندر بوس نے پہلی مرتبہ 1944 میں مہاتما گاندھی کو باپو کہا تھا  اور یہ لقب تب سے آج تک باقی ہے اور لوگ مہاتما گاندھی کے عدم تشدد کے نظریہ کی وجہ سے آج بھی ان کا احترام کرتے ہیں۔ بلا شبہ آزادی کے فوراً بعد ہی مہاتما گاندھی کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا لیکن گاندھی جی کی شہادت نے ایک سیکولر اور جمہوری ہندوستان کی بنیاد ڈالی۔

آج جب کہ پوری دنیا تشدد سے بھر چکی ہے ایسے میں ہر کوئی گاندھی جی کے عدم تشدد کے نظریہ کے بارے میں سوچ رہا ہے اور خیال دلوں میں آ رہا ہے کہ اگر آج گاندھی جی ہوتے تو وہ کیا کرتے۔

بلا شبہ ستیہ گرہ وہ نظریہ تھا جس کے ذریعہ بغیر تشدد کے اپنے حقوق طلب کئے جاتے
نا برابری اور تعصب ملک کی ترقی میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے اوراسے تکثیری پالیسی سے ہی ختم کیا جا سکتا ہے۔

پرامن احتجاج ستیہ گرہ کی ایک علامت ہے اور یہ ہمیں اس بات کی ترغیب دیتا ہے کہ ہم تانا شاہوں کے خلاف پر امن احتجاج کے لئے اٹھ کھڑے ہوں۔

عدم تشدد انصاف کے حصول کا آج بھی بہترین ذریعہ ہے اوراس نظریہ کے تحت انصاف کے نظام میں بہتری لائی جا سکتی ہے۔

خود اعتمادی اور خود کفیلی حکومت کو مجبور کرتی ہے کہ وہ انصاف سے کام لے اور عوام کی بہتری پر توجہ دے۔

عوامی خدمات کے ذریعہ اس نظام کو توڑا جا سکتا ہے جس میں مٹھی بھر لوگوں کی آواز سنی جاتی ہے اور عوام کی آواز کو دبا دیا جا تا ہے ۔

سیلف رول ایک متبادل حکومت کا نظریہ پیش کرتا ہے، جہاں ہم خود اپنے آپ پر حکمراں ہو سکتے ہیں  اور اس کے ذریعہ خود مختاری ، جمہوریت اور مساوات کو یقینی بنا یا جا سکتا ہے۔

مہاتما گاندھی کی سالگرہ کا جشن یوم عدم تشدد کے طور پر دنیا بھر میں منا یا جا نا ایک اہم واقعہ ہے۔ یہ ہمیں موقع دیتا ہے کہ ہم اپنی تاریخی امن پسندی اور جمہوری قدروں کی طرف لوٹیں۔ گاندھی جی کے نظریہ کے مطابق اپنے آپ پر قابو پانا سب سے بڑا کام ہے۔ گاندھی جی کا نظریہ ہمیں ایک ایسا انسان بنا تا ہے جو اپنے مفادات کے لئے دوسروں کو نقصان پہنچانے والا نہ ہو۔ اہنسا اور ستیہ گرہ ہمارے لئے نہایت ضروری ہے کیوں کہ اسی راستے پر چل کر ہم ایک خوشحال زندگی کی توقع کر سکتے ہیں۔ ایک بہترین شہری کی حیثیت سے ہم اپنی زندگی اوراپنے جمہوری قدروں کے لئے خود ہی ذمہ دار ہیں۔

 
انڈین نیشنل کانگریس، 24، اکبر روڈ، نئی دہلی – 110011، انڈیا، ٹیلیفون: 23019080-11-91 | فیکس: 23017047-11-91 | ای میل: connect@inc.in © 2012-2013 کل ہند کانگریس کمیٹی۔ جملہ حقوق محفوظ ۔ شرائط و ضوابط | رازداری پالیسی